""""غزل""""

Go down

""""غزل""""

Post by Mr.TaRaR on Fri Dec 22, 2017 10:26 am

مہمان چار دن کے اور گھر سمجھ لیا ہے
ہم نے سراب کو ہی منظر سمجھ لیا ہے

دنیا کو اپنے ہاتھوں مسخر سمجھ لیا ہے
کتنوں نے جانے خود کو سکندر سمجھ لیا ہے

اچھا ہے کیا برا کیا، اس بات سے غرض کیا
بس ذات ہی کو اپنی محور سمجھ لیا ہے

بھولے کتاب کو ہم، پیغام سارا بھولے
بھٹکے مسافروں کو رہبر سمجھ لیا ہے

تہذیب اپنی کھوئی، کھو بیٹھے علم سارا
رنگینئی جہاں کو زیور سمجھ لیا ہے

خود نقص سے مبرا، خود عیب سے ہیں عاری
اور سب کو راستے کا پتھر سمجھ لیا ہے

سمجھے گا خاک کوئی اب راز اس جہاں کے
قطرے نے خود کو ابرک ساگر سمجھ لیا ہے

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔اتباف ابرک

_________________
Mr.TaRaR
avatar
Mr.TaRaR
Super Moderater
Super Moderater

Posts : 12
Join date : 2017-11-11
Age : 16

Back to top Go down

Back to top


 
Permissions in this forum:
You cannot reply to topics in this forum
Copyright© 2017 ITDunya.Net. All rights reserved.Powered By iTMasTER